4,375

انداز تصوف

” الله نے جس کو طاقت دینا ہوتی ہے’
اسے طاقت سے پہلے تسلیم کا شعور دیتا ہے۔

” ؛اگر تسلیم نہ ملے اور طاقت مل جائے
تو انسان فرعون بن کر مرتا ہے۔

یعنی طاغوت میں مرتا ہے۔

اس لئے طاقت کے نیک امیدوار
تسلیم سے ابتدا کرتے ہیں”

“تسلیم کے بعد ملنے والی طاقت الله کی طرف سے ہوتی ہے”

ہماری حاصل کی ہوئی
“اور اللہ کی دی ہوئی طاقت میں فرق یہ ہے

کہ جب ہم تسلیم سے چل رہے ہوں’
“تو یہ طاقت اللہ کی دی ہوتی ہے

” اور جب کوئی اپنی طاقت سے چلے گا
تو پھر انجام کار فرعون’شداد’اور نمرود ہو گا۔

“تو زندگی کے مختلف انداز ہائے ہستی میں سے
ایک انداز تصوف کا ہے۔”

“جب یہ پتہ چل جائے
کہ زندگی کی فی نفسہِ کوئی اہمیت نہیں
تو جو علم یہ بتا رہا ہے اسے تصوف کہتے ہیں۔”

واصف علی واصف رحمۃ اللّٰہ علیہ

گفتگو ۰۳صفحہ۱۳۹

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں